شعبۂ اسکول

 

نمایاں خصوصیات:

حفاظ طلبہ و طالبات کے لیے چھ سال میں میٹرک کی تکمیل۔

ملک کے طول و عرض میں قائم شاخوں کا مضبوط اور منظم نیٹ ورک۔

طلباء و طالبات کے لیے علاحدہ علاحدہ اسکول۔

روزانہ کی بنیاد پر حفظ قرآن کی دہرائی کی ترتیب۔

دینی و عصری تقاضوں سے ہم آہنگ تعلیم و تربیت کا خصوصی انتظام۔

اعلیٰ تعلیم یافتہ تجربہ کار اساتذہ۔

اخلاقی تربیت و کردار سازی۔

عربی، اردو اور انگریزی زبانوں میں تقریر و تحریر پر خصوصی توجہ۔

سہ زبانی ہم نصابی سرگرمیوں کا مستقل انعقاد۔

جدید تعلیمی اصولوں پر مشتمل نظام امتحانات اور امتحانی پرچوں کی مرکزی جانچ۔

مستقبلی مشاورت سے متعلق فکری نشست کا اہتمام۔

کتابوں کے وسیع ذخیرہ پر مشتمل لائبریری۔

وسیع و عریض، ہوا دار درس گاہیں۔

ملٹی میڈیا پروجیکٹر اور جدید تکنیکی سہولیات سے مزین کمپیوٹر لیب۔

جدید سائنسی آلات پر مشتمل وسیع سائنس لیب۔

اسٹینڈ بائی جنریٹر۔

C.C.TV  سے مؤثر نگرانی۔

شعبۂ ابتدائی تعلیم(Preparatory VI)   شعبۂ اسکول سیکنڈری (Secondary)

شعبۂ  ابتدائی تعلیم(Preparatory VI):

بنیادی مقاصد:

          اس شعبہ کے بنیادی مقاصد حسب ذیل ہیں:

پہلا مقصد:………حفظ کی دہرائی

          اقرأ روضۃ الاطفال ٹرسٹ کے اس شعبہ میں چوں کہ حفاظ طلباء و طالبات ہی کو داخلہ دیا جاتا ہے، اس لیے اس کا سب سے اہم مضمون ’’حفظ قرآن‘‘ ہے اور اس مضمون کی اہمیت اس اسکول کے نام ہی سے واضح ہے ۔ لہٰذا اس شعبہ کا اوّلین مقصد یہی ہے کہ جن طلباء و طالبات نے قرآن کریم حفظ کیا ہے ، ان کی دہرائی اور گردان جاری رہے تاکہ انہیں قرآن کریم یاد رہے اور اس کےساتھ ساتھ قرآن کریم سے متعلق مختلف معلومات، علم التجوید اور مسنون دعاؤں کا سلسلہ بھی جاری رہے۔

دوسرا مقصد………جدید علوم کی تعلیم:

          طلباء و طالبات کو جدید علوم (انگریزی، حساب، سائنس، کمپیوٹر ، ڈرائنگ، اردو) کی تعلیم اس انداز سے دی جائے کہ وہ صرف ایک سال کے عرصہ میں اقرأ حفاظ سیکنڈری اسکول کی چھٹی جماعت میں داخلہ کے قابل ہوجائیں۔

ان دونوں بنیادی مقاصد کے لیے اس شعبہ کے تعلیمی اوقات کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے :

کل تعلیمی وقت کا نصف حصہ پہلے مقصد یعنی حفط کی دہرائی کے لیے مختص کیا گیا ہے ۔

بقیہ نصف حصہ دوسرے مقصد یعنی اسکول کی تعلیم کے حصول کے لیے مختص ہے۔

تیسرا مقصد………اخلاقی تربیت:

          مذکورہ علوم کی تدریس کے ساتھ ساتھ طلباء؍ طالبات کی ، اسلامی خطوط پر کردار سازی، اخلاقی تربیت بھی اقرأ حفاظ اسکول کے قیام کے بنیادی مقاصد میں سے ہے ۔

نصابِ تعلیم:

          اس شعبہ کے لیے تجویز کردہ نصاب کو دو حصوں میں تقسیم کیا گیا ہے :

پہلا حصہ………جدید عصری علوم:

          اس حصے میں انگریزی ، اردو، سائنس، ریاضی، کمپیوٹر اور آرٹس کے مضامین شامل ہیں۔

دوسرا حصہ………دینیات:

          اس حصے میں ’’حفظ قرآن کریم‘‘ کی دہرائی کے ساتھ ’’علم التجوید‘‘ اور اقرأ نظام تعلیم کی مرتب کردہ ’’اسلامیات‘‘ شامل ہے۔

شعبۂ اسکول سیکنڈری (Secondary):

ابتدائی شعبہ (Preparatory VI Class) کے نصاب کی کامیاب تکمیل کے بعد حفاظ طلباء؍ طالبات اقرأ ثانوی اسکول میں داخلہ کے اہل ہوں گے۔

ثانوی سطح کا نصاب (چھٹی تا دسویں جماعت) بھی دوحصوں پر مشتمل ہے ۔ جدید عصری علوم کا نصاب صوبائی محکمہ تعلیم کا منظور شدہ ہے ۔ جب کہ دینی علوم کا نصاب اقرأ نظام تعلیم سے منسلک علمائے کرام کا تجویز اور تیار کردہ ہے ۔

اقرأ حفاظ ثانوی اسکول صرف اور صرف حفاظ طلباء؍ طالبات کے لیے مخصوص ہے۔ غیر حفاظ طلباء ؍ طالبات داخلہ کے اہل نہیں ہیں۔

یہ تمام اسکول صوبائی حکومت کے نطامت تعلیم سے منظور شدہ اور ثانوی تعلیمی بورڈ سے الحاق شدہ ہیں۔

اس وقت اقرأ حفاظ سیکنڈری اسکول کی ۱۰۰ سے زائد شاخیں ملک کے بڑے بڑے شہروں مثلاً کراچی، لاہور، راولپنڈی، پشاور، کوئٹہ میں مصروف عمل ہیں۔

اس کے علاوہ ملک کے شمالی علاقوں گلگت، چترال اور اسکردو کے متعدد مقامات میں بھی اقرأ اسکول علم کی شعاعیں چار سو پھیلا رہا ہے ۔

اقرأ حفاظ کالج

 

میٹرک کے بعد اقرأ انٹرمیڈیٹ کالج کے دو سالہ پروگرام میں بھی داخلہ لیا جاسکتا ہے ۔

اس شعبہ میں اعلیٰ ثانوی تعلیمی بورڈ کے منظور شدہ نصاب کے مطابق تعلیم دی جاتی ہے۔

اس دو سالہ پروگرام میں طلباء ؍ طالبات سائنس میں پری میڈیکل اور پری انجینئرنگ میں کسی ایک کا یا پھر انٹر کامرس کا انتخاب کرسکتے ہیں۔

اقرأ حفاظ کالج کے کارہائے نمایاں:

          یہ بات قابل ذکر ہے کہ اقرأ حفاظ کالج نے بورڈ آف انٹر میڈیٹ کراچی کے اعلامیہ کے مطابق ۲۰۰۹ ء میں شاندار ۱۰۰ فیصد نتائج دینے والے نو کالجز میں آنے کااعزاز حاصل کیا۔ اور الحمد للہ! ۲۰۱۰ ء میں اقرأ حفاظ سائنس کالج اپنے نتائج کے اعتبار سے کراچی کے صف اوّل کے دو کالجز میں آگیا تھا اور کامیابیوں کا یہ سفر تاحال جاری ہے ، فللہ الحمد۔

اسی طرح لاہور میں قائم شعبہ کالج میں اپنے آغاز سے تاحال ۱۰۰ فیصد شاندار نتائج دے رہا ہے اور اس کا شمار لاہور کے چند ممتاز ترین کالجوں میں ہوتا ہے ۔ پشاور اور گوجرانوالہ میں بھی شعبہ کالج کا آغاز ہوچکا ہے