آخرت میں ایک ”حافظ بچہ“اپنے نام لکھوائیے

ایک بچہ حافظ بنائیے

 

حفظِ قرآن کریم کی سعادت کا حصول ہر مسلمان کی آرزو اور تمنا ہے، قیامت میں اولین و آخرین انبیاء کرام علیہم الصلاۃ والسلام اور اولیاء عظام کے عظیم مجمع میں تاج پوشی اور دس افراد کے نجات کے سرٹیفیکیٹ اور ایک ایک حرف پر دس نیکیاں ایسی بشارتیں ہیں جس سے کوئی مسلمان مستغنی نہیں ہوسکتا۔ لیکن بہت سارے گھرانے کسی نہ کسی وجہ سے اس سعادت کے حصول میں ناکام رہتے ہیں۔ اسی لیے علمائے کرام ترغیب دیتے ہیں کہ پہلی کوشش یہ ہونی چاہیے کہ اپنے کسی بچے کو حفظ قرٓان کی دولت سے مالا مال کرائے، اگر اپنا بچہ نہ ہو تو اپنے کسی عزیز کے بچے کو گود لے کر اس کو حفظ قرآن کی سعاست سے مزین کرے اور اگر یہ بھی ممکن نہ ہو تو کسی بچے کے حفظ قرآن کے اخراجات پورے کر کے اس کا اجر آخرت میں اپنے نام لکھوائے۔

غربت کی وجہ سے تعلیمی سلسلہ جاری نہ رکھنے والے نادار طلبہ خصوصا شمالی علاقہ جات کے بچوں کی کفالت کے لیے اقرأ روضۃ الاطفال ٹرسٹ کے زیر انتظام قائم ’’اقرأ ویلفیئر ٹرسٹ‘‘ کے تحت ’’ایک بچہ حافظ بنائیے‘‘ اسکیم کا آغاز کیا گیا ہے تاکہ غریب اور نادار بچوں کو حفظ قرآن کریم کی دولت سے مالامال کیا جاسکے۔ آپ کی معمولی توجہ اور حسنِ نیت و عمل کی برکت سے اگر ایک بچہ بھی تعلیم قرآن سے آراستہ ہوجائے تو ان شاء اللہ آپ کے لیے بہترین صدقہ جاریہ ثابت ہوگا۔ اقرأ کی کسی بھی شاخ سے بچے کا نام حاصل کر کے اس بچے کے اخراجات کی ذمہ داری اپنے کندھوں پر لیں اور صدقہ جاریہ اور اجر و ثواب کا اکاؤنٹ اور کھاتہ اپنے نام کھلوائیں۔ ایک بچے کے سالانہ اخراجات صرف ۱۴۴۰۰ (مبلغ چودہ ہزار چار سو)روپے ہیں یعنی صرف بارہ سو روپیہ ماہوار جو یقینا آپ کے کندھوں پر بوجھ نہیں ہوگا۔ ان شاء اللہ اس بچے کے روزانہ تلاوت کا حصہ آپ کے اعمال نامہ میں بفضلِ خداوندی درج ہوتا رہے گا۔